• فلاحي ریاست په وسائلو نه بلکې په احساس سره جوړیږي

د پاکستان وزیراعظم په رحمت اللعالمین نړیوال کانفرنس کښې وویل: د ولس لپاره یو فلاحي هیواد په امکاناتو او وسائلو نه بلکې د چارواکو په احساس سره جوړیدی شي.

د پاکستان وزیراعظم عمران خان په اسلام آباد کښې د میلاد النبي(ص) په مناسبت جوړې شوې دوه ورځنۍ (رحمت اللعالمین) نړیوالې غونډې په افتتاحیه مراسمو کښې په خپلې وینا کښې وویل: نیغه لاره همهغه د رسول ا... مبارک لاره ده او د خدای په ښودلې لارې باندې تګ سره د انسان ژوند بدلیږي. هغه وویل چې یو فلاحي ریاست یوازې په وسائلو نه بلکې په احساس سره جوړیدی شي.

د خدای د ګران پيغمبر حضرت محمد مصطفی(ص) د نیکمرغه میلاد په مناسبت د پاکستان په پلازمینې اسلام آباد کښې (رحمت اللعالمین نړیواله غونډه) نن پیل شوه چې سبا به هم دوام ولري.

په دې غونډه کښې د پاکستان سربیره د ایران د اسلامي جمهوریت، سعودي عربستان، عراق، مصر، افغانستان، شام، مراکش او بریطانیې عالمان او مذهبي پوهان هم ګډون کوي.

د دې دوه ورځني کانفرنس د پاې په مراسمو کښې به د پاکستان ولسمشر ډاکټر عارف علوي هم وینا وکړي.

 

اسلام آباد: (دنیا نیوز) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ سیدھاراستہ نبی کریم ﷺ کاراستہ ہے, اللہ کے بتائے راستے پر چلنے سے انسان کی زندگی تبدیل ہوتی ہے. فلاحی ریاست وسائل نہیں، احساس سے بنتی ہے عمران خان 2 روزہ بین الاقوامی رحمت العالمین کانفرنس کے افتتاحی سیشن سے خطاب کر رہے تھے. کانفرنس میں متعدد مسلم ممالک کے عالمی سکالرز شریک ہیں۔ تین یونیورسٹیز میں سیرت النبی چیئرز قائم کی جائیں گی۔۔۔اسلام کے ٹھیکے دار حضور کے نام پر غلط اقدامات سے خود کو نقصان پہنچاتے ہیں۔۔۔آزادی اظہار کے نام پر توہین کے خلاف عالمی مہم چلائیں گے

وفاقی حکومت کے زیر اہتمام دو روزہ رحمت اللعا لمین کانفرنس آج شروع ہو گئی۔ وزیراعظم عمران خان کانفرنس نے افتتاحی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اللہ نے انسان کو خاص مقصد کیلئے پیدا کیا ہے، خدا کے بتائے ہوئے راستے پر چلنے سے انسان کی زندگی تبدیل ہوتی ہے۔ سیدھا راستہ نبی کریم ﷺ کا بتایا ہوا راستہ ہے، ہمارے نبی ﷺ نے پوری دنیا بدل دی، فلاحی ریاست وسائل سے نہیں احساس سے بنتی ہے۔  

وزیراعظم نے مزید کہا کہ 3 یونیورسٹیز میں سیرت النبی ﷺ چیئرز قائم کی جائیں گی، آزادی اظہار کے نام پر توہین کے خلاف عالمی مہم چلائیں گے، اسلام کے ٹھیکیداروں کو اسلام کے اصل فلسفے کی سمجھ نہیں، وہ حضور ﷺ کے نام پر غلط اقدامات سے خود کو نقصان پہنچاتے ہیں۔

کانفرنس میں عراق سے آئے ڈاکٹر عمار نقشوانی سمیت متعدد سکالرز شریک ہیں جبکہ بھارت، ایران، سعودی عرب اور مصر سمیت دیگر ممالک کےسکالرز آج اسلام آباد پہنچیں گے۔ کانفرنس کے آخری سیشن میں صدر مملکت کی آمد بھی متوقع ہے۔

 

 

ټیګونه

Nov 20, 2018 14:19 Asia/Kabul
کمنټونه